Skip to content

احکام واستفتائات

آڈیو،ویڈیو

فوٹو گیلری
آڈیو
ویڈیو
اگر امریکی حکومت نے ایٹمی معاہدہ توڑا تو ایران بھی جوابی کارروائی ضرور کرے گا، پرنٹ کریں
23-11-2016
Basij commanders and forces meet with Ayatollah Khameneiرہبر انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے 'بسیج' (رضاکار فورس) کے ہزاروں کارکنان سے ملاقات میں 'بسیج' (رضاکار فورس) کو لشکر انقلاب، دینی جمہوریت کا آئینہ اور بصیرت پر استوار تنظیم قرار دیا۔ بدھ 23 نومبر کے روز ہونے والی اس ملاقات میں رہبر انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے معاشرے کے مختلف میدانوں میں موثر موجودگی اور کارکردگی کے مقصد سے رضاکار فورس کے مختلف دھڑوں اور سطحوں کے درمیان تعاون بڑھانے کے لئے مفکر کمیٹیوں کی تشکیل کی صحیح منصوبہ بندی پر زور دیا۔ آپ نے فرمایا کہ رضاکاری کے جذبے کا مطلب یہ ہے کہ انسان ہمیشہ اللہ کو اپنے ساتھ اور اپنے پاس محسوس کرے اور کبھی بھی مایوسی، افسردگی اور قنوطیت میں مبتلا نہ ہو۔
رہبر انقلاب اسلامی نے اپنے خطاب کے آغاز میں اربعین امام حسین کے موقع پر پیدل کربلا جانے کے پرشکوہ عمل کو ایک تاریخی عمل اور دست قدرت خداوندی کا مظہر قرار دیا۔ آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے فرمایا کہ اربعین کے جلوس اور اسی طرح امریکی جاسوسی کے مرکز پر ایرانی طلبہ کے قبضہ کر لینے نیز 31 دسمبر 2009 کو (ایران بھر میں اسلامی نظام کی حمایت میں) نکلنے والے جلوس اور اعتکاف کے اعمال تبلیغ اور پرچار کا نتیجہ نہیں بلکہ ان مسائل میں دست خدا دیگر معاملات کی نسبت زیادہ واضح طور پر نظر آتا ہے۔
رہبر انقلاب اسلامی نے اربعین کے جلوس میں کروڑوں لوگوں کی شرکت کو بصیرت آمیز عشق و محبت کی نشانی قرار دیا اور فرمایا کہ جو زائرین اس توفیق سے مشرف ہوئے انھیں مبارک باد دیتا ہوں اور زیارت کی قبولیت کی دعا کرتا ہوں اور عراق کے عوام کا جنھوں نے اس محبت سے مہمانوں کی خدمت کی اور امور کو انجام دیا شکریہ ادا کرتا ہوں۔
رہبر انقلاب اسلامی کا کہنا تھا کہ اربعین کے اس جلوس کی شکل میں حاصل ہونے والی عظیم نعمت کے اسی طرح باقی رہنے کے لئے ضروری ہے کہ اس نعمت کا شکریہ ادا کیا جائے اور حقیقی شکریہ عملی طور پر ادا کیا جانا چاہئے، چنانچہ جس طرح ایران کے عوام نے ایثار و قربانی کے ذریعے اسلامی انقلاب کی قدردانی کی اسی طرح اربعین کے اس پروگرام کی اس جذبے اور قلبی حالات جیسے جذبہ اخوت، محبت، ولایت پر توجہ اور سخت میدانوں میں قدم رکھنے کی آمادگی کے ذریعے قدردانی کی جائے جو اس سفر کے ثمرات ہیں۔
رہبر انقلاب اسلامی نے فرمایا کہ دنیا میں کچھ حلقے اربعین حسینی کے اس نورانی عمل کو مٹانے یا اس میں تحریف کرنے کی کوشش میں ہیں لیکن وہ ہرگز اس میں کامیاب نہیں ہوں گے اور یہ عظیم نعمت ایران اور عراق کی اقوام کے لئے سرفرازی و سربلندی کا باعث بنے گی۔
رہبر انقلاب اسلامی نے رضاکار فورس کے لئے کئی اہم ہدایات دینے کے بعد فرمایا کہ علاقے کے بعض ملکوں نے رضاکار فورس کی نہج پر اپنے یہاں ایسی ہی تنظیمیں تشکیل دی ہیں جبکہ دشمن اس اہم نمونے پر وار کرنے کی فکر میں لگا ہوا ہے۔ آپ نے فرمایا کہ دشمن کی ایک خطرناک سازش اس ادارے کے اندر دراندازی کرنے کی ہے جس کے بارے میں گزشتہ ایک سال سے زیادہ عرصے سے بار بار انتباہ دیا جاتا رہا ہے۔
آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے اپنے خطاب میں امریکا کی استکباری حکومت اور ایران سے متعلق کچھ مسائل کا ذکر کرتے ہوئے فرمایا کہ ہم سر دست امریکا کی نئی حکومت کے بارے میں جو اقتدار سنبھالنے جا رہی ہے کوئی رائے قائم نہیں کر سکتے، تاہم امریکا کی موجودہ حکومت مشترکہ جامع ایکشن پلان میں جو طے پایا تھا، مشترکہ طور پر جو فیصلے کئے گئے تھے اور اس وقت حکام نے جو چیزیں ہم سے بیان کی تھیں ان کے بر خلاف عمل کر رہی ہے اور اس نے متعدد خلاف ورزیاں کی ہیں۔
رہبر انقلاب اسلامی نے امریکی کانگریس میں دس سالہ پابندیوں کے قانون کی مدت میں توسیع کا حوالہ دیتے ہوئے فرمایا کہ اگر پابندیوں کی مدت میں توسیع کو عملی جامہ پہنایا گیا تو یہ یقینا مشترکہ جامع ایکشن پلان کی خلاف ورزی ہوگی اور انھیں یاد رکھنا چاہئے کہ اسلامی جمہوریہ ایران یقینی طور پر جوابی کارروائی کرے گا۔
رہبر انقلاب اسلامی نے زور دیکر کہا کہ ایٹمی معاہدہ یعنی یہی مشترکہ جامع ایکشن پلان ملت ایران اور مملکت ایران پر دباؤ کے ہتکنڈے میں تبدیل نہیں ہونا چاہئے۔
رہبر انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمی خامنہ ای نے ملکی حکام اور ایٹمی معاہدے سے متعلق عہدیداروں کے ان بیانوں کا حوالہ دیا جن میں انھوں نے پابندیوں اور دباؤ کے ختم ہو جانے کی باتیں کہی تھیں۔ آپ نے فرمایا کہ امریکی حکومت نے مشترکہ جامع ایکشن پلان کے تحت اپنے وعدوں کی خلاف ورزی یا ناقص کارکردگی کے علاوہ جس کا ذکر مشترکہ جامع ایکشن پلان سے متعلق حکام نے بھی صراحت کے ساتھ کیا ہے، اب ایٹمی معاہدے کو ایران پر نئے سرے سے دباؤ ڈالنے کے ہتکنڈے کے طور پر استعمال کرنا شروع کر دیا ہے۔
رہبر انقلاب اسلامی نے فرمایا کہ اسلامی جمہوریہ ایران قدرت خداوندی اور عوام کی قوت پر بھروسے کی وجہ سے دنیا کی کسی بھی طاقت سے خائف نہیں ہے۔
 
< پچھلا   اگلا >

^